اوزون کے نقصانات – عاکفہ عامر

آج آٹھویں جماعت میں پہلا دن تھا.جب سب بچے اسمبلی سے کلاس میں آٸے تو پۃ چلا کہ پہلا پیرئڈ سائنس کا ہے.

استانی نے کلاس میں داخل ہونے کے بعد پہلے اپنا تعارف کروایا اور پھر کتاب کھلوائی پہلے مضمون کا نام اوزون (ozone)تھا. “بچوں آپ لوگ اوزون کی تہ کے بارے میں کیا جانتے ہیں؟” استانی نے کتاب میں دیکھتے ہوئے پوچھا. “مس اوزون کی تہ سورج سے آنے والی نقصان دہ شعائوں کو زمین تک آنے سے روکتی ہے” دوسری سیٹ پر بیٹھی عائشہ نے کھڑے ہو کر بتایا. استانی نے عائشہ کو سراہا پھر بسمہ کی طرف متوجہ ہوئیں جو اپنی باری کے انتظار میں کھڑی تھی. “مس اوزون آکسیجن کے تین جوہروں (O3) پر مشتمل ہے.”بسمہ نے جواب مکمل کیا تو استانی نے اسے بیٹھنے کا اشارہ کیا پھر بورڈ پر کچھ بناتے ہوئے کہا “جی آپ دونوں نے بالکل صحیح بتایا ہے. راصل زمین کی سطح سے تقریبا 19 کلو میڑ اوپر اور 48 کلو کی بلندی تک موجود اوزون کی اس تہ میں سورج سے آتی ہوئی بالائے بنفشی شعائیں آکسیجن کے ساتھ نور کیمیائی عمل (photochemical reaction) کرکے اوزون بناتی ہیں.”

بورڈ پہ بنائی جانے وال تصویر بھی اس میں موجود چیزوں کی نشاندہی کے ساتھ مکمل ہو چکی تھی.”مس یہ اوزون کی تہ ہمارے لیے مفید ہے یا نقصان دہ ؟” نمرہ نے ہاتھ اٹھاتے ہوۓ استانی سے پوچھا. “بیٹا اوزون کی تہ تو ہمارے لیے مفید ہے نا کیونکہ یہ سورج کی نقصان دہ شعائوں کو زمین تک پہنچنے سے بچاتی ہے” استانی کا جواب ابھی مکمل ہوا تھا کہ بریرہ نے اگلا سوال پوچھنے کے لئے ہاتھ اٹھایا. “مس اوزون کی تہ میں سوراخ ہونے کی کیا وجہ تھی؟” “بیٹا اوزون کی تہ پر سوراخ زمین پر آلودگی کی وجہ سے ہورہا تھا مختلف قسم گیس جو کہ اوزون کو نقصان پہنچا رہی ہیں لوگوں نے انکا استعمال زیادہ کر دیا ہے.” استانی نے اپنی بات ختم ہی کی تھی کہ حبا نے اگلا سوال پوچھ لیا. “مس کون کون سی گیس ہیں جو اوزون کی تہ کو نقصان پہنچا رہی ہیں؟” استانی پیچھے بیٹھی حبا کی طرف متوجہ ہوئیں. “بیٹا جو گیس اوزون کی تہ کو نقصان پہنچا رہی ہیں ان میں CFCs ,HFCs اور VOCs وغیرہ شامل ہیں.اب آپ لوگ بتائیے کہ یہ گیس ہماری زندگی میں کہاں استعمال ہوتی ہیں؟”

چند بچوں نے ہاتھ کھڑا کیا. استانی نے وجیہہ کو بتانے کا اشارہ کیا. “مس یہ CFCs اور HFCs تو فرج اور اےسی جیسی مشینوں سے نکلتی ہیں نا.” وجیہہ نے اپنی بات ختم کی تو استانی امل کی طرف مڑیں. “مس VOCs وہ کمپاونڈ ہوتے ہیں جیسے پیٹرول وغیرہ.” امل نے بتایا. “جی آپ دونوں نے درست جواب دیا ہے.” استانی نے دونوں کو سراہا پھر پہلی سیٹ پر بیٹھی حفصہ کی طرف متوجہ ہوئیں جو تھوڑا کنفیوز لگ رہی تھی. “بیٹا آپ کو اگر کوئی بات سمجھ نہیں آرہی تو بغیر جھجک پوچھ لیجئے.” استانی نے نرمی سے پوچھا.
حفصہ نے کتاب سے نظر اٹھائ اور استانی سے معلوم کیا “مس مجھے یہ سمجھ نہیں آرہا کہ یہ گیس اوزون کی تہ کے لئے نقصان دہ کیسے ہوتی ہیں؟” “بیٹا دیکھیے یہ گیس اورگینک نیچر (organic nature) ہوتی ہے یہ اوزون کے لئے بہت نقصان دہ ہوتی ہے. کیونکہ اوزون آکسیجن کا کمپاونڈ ہے اس لئے تینوں گیس اس کے ساتھ ردعمل (react) کرتی ہیں. اور یہ ریکشن ختم نہیں ہوتا یہ ایک چین ریکشن کی صورت میں چلتا رہتا ہے اسی لئے یہ اوزون کے لئے نقصان دہ ہوتی ہے” .”مس لیکن اب تو اوزون کی تہہ دوبارہ بن رہی ہے نا؟” فاغیہ نے استانی کی بات جتم ہونے کے بعد پوچھا.

“جی بیٹا اگر ہم آلودگی کم کریں گے تو یہ تہہ دوبادہ بنے گی اور اسکا صحیح ہونا بے حد ضروری ہے.” استانی نے جب اپنی بات ختم کی تو انیقہ نے سوال پوچھنے کے لئے ہاتھ اٹھایا. “مس اس سے کیا نقصان ہوتا ہے؟” “بیٹا دیکھیے اوزون کی تہ میں سوراخ کی وجہ سے سورج کے نقصان دہ شعائیں زمین پر آرہی ہیں اس سے برف پگھلے گی اور سیلاب کا خدشہ زیادہ ہوگا انٹارٹکا میں بھی بہت زیادہ برف پگھلنے کی وجہ یہی ہے.”

گھنٹی بجنے کی آواز آئ تو استانی بچوں کو اسی سبق سے متعلق ہوم ورک دیتی ہوئ اور بچوں کو سراہتے ہوئے کلاس سے چلی گٸیں.

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: