ورکنگ وومن یا بے دام غلام؟ – عالیہ زاہد بھٹی

“آریز، حسّان ، ثناء ، اریبہ …….جلدی سے آجاؤ . پاپا کو بھی بلاؤ ناشتہ تیار ہے.” ردا نے چائے تھرماس میں ڈالتے ہوئے حسبِ معمول نقّارے پر چوٹ لگانے والی صدا لگائی . ٹوسٹ دستر خوان میں لپیٹ کر پلیٹ میں رکھے اور انڈے اور آملیٹ کی الگ الگ پلیٹس وہیں کچن میں سلیب پر رہنے دیں اور چائے اور ٹوسٹ لے کر بچوں کے کمرے میں آگئی .

اے سی لگا ہوا تھا…… ٹھنڈک سے مزاج پر اچھا اثر ہوا .زمینی دسترخوان پر چیزیں رکھ کر بیٹھ گئی . پسینے میں شرابور وجود جو سوچ رہا تھا کہ کمرے میں جاتے ہی چیخ کر مرمت کروں گی مگر اندر کمرے کی ٹھنڈک نے زبان میں مٹھاس بھر دی . “جاؤ اب تم لوگ جا کر انڈے اور آملیٹ کی پلیٹس اور چائے کے کپس لے آؤ”، فراز نے بھی کمرے میں قدم رکھا.
“جناب ناشتہ تیار ہے ……. چلو جی جلدی کرو دیر ہو رہی ہے.”
“جی پاپا بیٹھیں بس ابھی لائے سب” ، حسّان نے چٹکی بجائی اور باہر لپکا.
“ہائیں سب کچھ میں نے بنایا گرمی سے ہلکان ہوگئی اور ان صاحب کو دیکھو کس مزے سے کریڈٹ لے رہے”، ردا کو غصہ آیا.

“ارے اتنا تو میرے بچے تمہارا ساتھ دیتے ہیں پھر بھی تم خوش نہیں ہوتیں……… ” فراز نے کہہ کر چائے اپنے آگے کی تو ردا ان کو دیکھ کر رہ گئی. گھڑی پر نظر پڑی تو فوراً اٹھنا پڑا کلاس کا ٹائم ہو رہا تھا.
اس لاک ڈاؤن کی وجہ سے روٹین اتنی اپ سیٹ ہو گئی تھی کہ فجر کے بعد سونے کی وجہ سے ہر کام لیٹ ، یہی کلاس جو پوائنٹ پر بیٹھ کر یونیورسٹی جاکر وقت سے پہلے پہنچ کر لی جاتی تھی ……. گھر میں بیٹھے بیٹھے روز دیر ہوجاتی اور سب کو ناشتہ دے کر خود اسے بھوکے پیاسے ہی لگا تار تین گھنٹے کی کلاس لینی پڑتی. آج بھی یہی حال ہوا.
“ماما کہاں جارہی ہیں ناشتہ تو کر لیں”، ثناء نے چیزیں رکھ کر اسے روکا
“تم لوگ کرو میں بعد میں”، وہ دوسرے کمرے میں آکر لیپ ٹاپ کے آگے بیٹھ گئی …….. گوگل میٹ لگا کر کیمرہ آف اور مائک آن کیا اور شروع ………!

اپنی کلاسز کے بعد چھوٹی بیٹی کے اسکول کی کلاسز میں اس کے ساتھ مدد کراکر کھانے کی طرف پھر باقی کام نمٹا کر ظہر پڑھنے کمرے میں آکر ابھی بیٹھی ہی تھی کہ فراز اپنی کلاسز لے کر آگئے.
“اور بیگم صاحبہ کیا ہو رہا ہے اے سی میں آرام فرمایا جا رہا ہے”، یہ کہہ کر وہ بستر پر دراز ہو گئے اور وہ ہمیشہ کی طرح وضاحت بھی نہ دے سکی کہ بھوک اور پیاس سے نڈھال کام کر کر کے بس نماز پڑھنے کا آرام کرنے آئی تھی . وہ کہہ بھی دیتی تو انہوں نے کونسا مان لینا تھا .ان کی نظر میں تو اس کا کام کبھی کام رہا ہی نہیں تھا، وجہ وہی جو شادی کے ابتدائی دنوں میں ان کی امی حضور نے کہہ دیا تھا کہ کبھی بھی بیوی کی تعریف مت کرنا سر چڑھ جائے گی . آج سترہ اٹھارہ سال بعد بھی ان کو یہ سبق ازبر تھا کیونکہ ہر ملاقات پر والدہ صاحبہ اس کا اعادہ کرنا کبھی نہ بھولیں …….. نماز پڑھنے کے بعد سب کو کھانا کھلائے کے بعد کاغذ قلم لے کر بیٹھ گئی کہ مہینے کا اختتام تھا . کچھ لکھنے لکھانے ، رپورٹس بنانے ایک فلاحی ادارے کے ساتھ بطور سوشل ورکر منسلک تھی . اس ادارے کی مالیاتی رپورٹس بھی پینڈنگ میں تھیں وہ کام مکمل کیا ہی تھا کہ فراز قیلولہ فرما کر تازہ دم ہو چکے تھے.

آتے ہی اسے یہ کام کرتے دیکھا تو حسب معمول بھنا اٹھے……..
” بیگم صاحبہ جتنا وقت آپ ان کاموں پر دیتی ہیں ، اتنا اپنے گھر پر دیں ناں تو آپ کے بچے ٹاپ کریں ٹاپ” ……. کچھ بھی کہنا بیکار تھا وہ وہاں سے چائے بنانے اٹھ گئی . واپس آئی تو فراز اپنے والد سے محو گفتگو تھے.
“ارے نہیں ابو جی ردا ایسی نہیں ہے ……. ”
“ارے آسانی ہو جاتی ہے…….. جوائنٹ اکاؤنٹ میں اس لئے کھلوایا , جی جی مجھے پتہ ہے حساب کا .اس نے کس کو دینا نہیں نہیں اس کو تو اے ٹی ایم بھی استعمال کرنا نہیں آتا ، ارے چیک سے بھی نہیں نکلوا سکتی …… ہا ہا ہا”
آگے سےہنس ہنس کر ان کا غصہ ٹھنڈا کرنے کی کوشش جاری رکھی . ردا کمرے سے نکل آئی . رات گئے سب کے سونے کے بعد وہ موبائل ہاتھ میں لئے دل کا درد اس میں منتقل کرنے لگی.

“کیا ایک غیرت مند مسلم پردے دار ورکنگ وومن ہونا جرم ہے؟ کیا اس ورکنگ وومن کو جو ایک ماں ہو بیوی ہو بہو ہو ……… اسے اپنی ساری محنت دوسروں کی جھولی میں ڈال کر یہ ثابت کرنا ضروری ہے کہ میں عام عورتوں کی طرح کپڑے جوتے کے لئے نہیں کماتی میں تو آپ کو سہولت دینے کے لئے، اتنا پڑھ لکھ کر بھی اے ٹی ایم اور چیک سے کوسوں دور رہنا کہ مجھے کوئی لالچ نہیں ، یہ سب تو آپ کے لئے …….. کب تک ؟ کب تک یہ صفائیاں دیتی رہے گی ؟ اور کوئی پھر بھی نہیں مانے گا . یارب! یہ تو بہت مشکل زندگی ہو گئ کون کہتا ہے کہ ورکنگ وومن خود مختار ہوتی ہے بلکہ اسے تو سب سے زیادہ شو آف کرانا پڑتا ہے کہ

” نہیں سر ہم بے نتھے بیل نہیں ہم تو موسٹ اوبیڈیینٹ ہیں ہم بھی آپ کے کمائی بھی آپ کی نام بھی آپ کے …… ورکنگ وومن یا بے دام غلام؟؟؟

Leave a Reply

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: